سلیمان نبی

وکی اقتباسات سے
Jump to navigation Jump to search

حضرت داؤد کے بیٹے، اور مسلمانوں کے نزدیک ایک نبی، مسیحی انہیں صرف بادشاہ مانتے ہیں۔ نبی نہیں۔

اقتباسات[ترمیم]

  • انصاف ، صادق کے لیے خوشی اور بدکرداروں کے لیے خوف ہے ۔
  • جو درست کلام سے جواب دیتا ہے اس کے لب چومے جائیں گے ۔
  • جو کوئی جاہل کو عزت دیتا ہے وہ اس کی مانند ہے جو موتیوں کی تھیلیوں کو پتھروں میں پھینکے ۔
  • جیسے کتا اپنی قے کی طرف لوٹتا ہے ، ایسے ہی جاہل بار بار حماقت کرتا ہے ۔
  • شریر آدمی جو مسکین لوگوں کا حاکم ہو ، وہ گرجتا ہوا شیر اور بھوکا ریچھ ہے ۔
  • دغا کی روٹی ، آدمی کو میٹھی لگتی ہے مگر بالآخر اس کا منہ کنکریوں سے بھر جاتا ہے ۔
  • وہ جو بے وقوف کے ہاتھ پیغام بھیجتا ہے ، گویا اپنے پاؤں خود ہی کاٹتا ہے ۔
  • گھر اور مال وہ میراث ہے جو باپ سے حاصل ہوتی ہے ، مگر عقل مند اور نیک بیوی نعمت خداوندی ہے ۔
  • رعایا کی خوشحالی سے بادشاہ کی رونق ہے اور رعایا کی مفلسی سے بادشاہ کی تباہی ہے ۔
  • ایک خوش مزاج آدمی پژمردہ دلوں کی دوا ہے ۔
  • بہترین تعلیم ، سب سے اچھا جہیز ہے ۔
  • ملائم جواب ، غصے کو کھو دیتا ہے مگر کرخت انگیز ہیں ۔
  • دانا اپنے دل کی بات کو چھپاتا ہے لیکن احمق اپنی حماقت کی منادی کرتا رہتا ہے ۔
  • صاحب فہم پر ایک جھڑکی ، احمق پر سو کوڑوں سے زیادہ مؤثر ہے ۔ [1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

ویکیپیڈیا میں اس مضمون کے لیے رجوع کریں سلیمان نبی.


  1. اقوال زریں، رائے محمد کمال