معین الدین چشتی

ویکی اقتباس سے
Jump to navigation Jump to search

اقوال[ترمیم]

  • مصیبت اور سختی کاآنا صحت اور ایمان کی علامت ہے۔
  • عقلمند دنیا کا دشمن اور اللہ کا دوست ہے۔
  • بد ترین شخص وہ ہے جو توبہ کی امید پر گناہ کرے۔
  • وہ ضعیف ترین ہے جو اپنی بات پر قائم رہے۔
  • کائنات میں صرف ایک چیز نور خدا موجود ہے اور تمام غیر موجود۔
  • دشمن کو دل کی مہربانی اور احسان سے اور دوست کو نیک سلوک سے جیت لو۔
  • عارفین کا توکل یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ کے سوا کسی غیر سے مدد نہ چاہیں اور کسی کی طرف متوجہ نہ ہوں۔
  • بھوکے کو کھانا کھلانا ضرورت مندوں کی ضرورت پوری کرنا اور دشمن کے ساتھ نیک سلوک کرنا نفس کی زینت ہے۔

مزید دیکھیں[ترمیم]

ویکیپیڈیا میں اس مضمون کے لیے رجوع کریں معین الدین چشتی.